ہڑتال میں ایک دن کی ڈھیل

امدادی سامان سے بھری درجنوں گاڑیاں ضبط
وادی میں منگل کوحریت کانفرنس(گ) نے شب برات کے پیش نظر ہڑتال میں ڈھیل کا اعلان کیا تھا جس کے پیش نظرسرینگر اوروادی کے دیگر قصبوں میں معمول کی سرگرمیاں بحال ہوگئیں ۔کاروباری سرگرمیاں، ٹرانسپورٹ اور تعلیمی سرگرمیاں دن بھر جاری رہیں۔حریت اعلان کے پیش نظر پورے شہر سے پولیس اور سیکورٹی فورسز کی تعیناتی مکمل طور پر ہٹائی گئی اور کئی دنوں تک جاری رہنے والی لوگوں کی نقل و حرکت پر عائدپابندیوں کو بھی اٹھایا گیا جس کے نتیجے میں پائین شہر اور سول لائنز علاقوں میں تمام دکانیں اور ہر طرح کے کاروباری ادارے ،سرکاری دفاتر، اسکول ، کالج، بنک ، سرکاری راشن گھاٹ کھل گئے اور گاڑیوں کی آمدورفت بھی شروع ہوگئی ۔
اس دوران وادی کے کئی اضلاع سے امدادی سامان کی گاڑیاں سرینگر پہنچائی گئیں جن میں پرانے شہر کے لوگوں کے لئے اشیائے ضروریہ موجود تھیں جبکہ پولیس نے پانتھ چوک اور سونہ وار میںمجلس مشاورت شوپیان کی ایسی درجنوں گاڑیوں کو روک کر مجلس صدر سمیت20افراد کو حراست میں لیاجن میں لاکھوں روپے مالیت کا ساز وسامان موجود تھا۔بعد دوپہردرجنوںگاڑیوں پر مشتمل ایک قافلہ امدادی سامان لیکر سرینگر کی طرف روانہ ہواجس کی سربراہی مجلس مشاورت کے صدر عبد الرشید دلال کررہے تھے۔ عبد الرشید دلال کا کہنا تھا کہ حریت کانفرنس نے ضلع شوپیان کو مائسمہ تک امدادی سامان پہنچانے کی اپیل کی تھی اس لئے وہ امدادی سامان منزل تک پہنچاکر مقامی ذمہ داروں کے حوالے کریں گے۔تاہم جب امدادی سامان سے بھری گاڑیاں پانتھ چوک کے نزدیک پہنچ گئیں تو پولیس کی بھاری جمعیت نے گاڑیوں کو روک کر آگے جانے کی اجازت نہیں دی البتہ کچھ گاڑیاں وہاں سے نکلنے میں کامیاب ہوئیں جن کو سونہ وار علاقہ میں پولیس تھانہ رام منشی باغ کے نزدیک روکا گیا۔اس موقعہ پر پولیس نے مجلس مشاورت کے صدر سمیت20افراد کو حراست میں لیا اور آخری اطلاع ملنے تک امدادی گاڑیاں پولیس کی تحویل میں تھیں۔اس دوران بڈگام سے بھی نصف درجن گاڑیایوں پر مشتمل امدادی گاڑیاں برزلہ پہنچائی گئیں تاہم وہاں کے مقامی لوگوں نے مذکورہ امدادی گاڑیوں کوپائین شہر کی طرف روانہ کیا۔ وادی کے دیگر اضلاع سے بھی سرینگر کے لوگوں کے لئے امدادی سامان جمع کرنے کا کام شروع کیا گیا ہے اور آنے والے ایام کے دوران مذکورہ سامان سرینگر پہنچایا جارہا ہے۔
دریں اثناء پولیس نے حریت کانفرنس (گ) کے خلاف کریک ڈائون کو جاری رکھتے ہوئے سرینگر کے پارمپورہ علاقے میں منگلوار مسلم لیگ کے قائمقام جنرل سیکریٹری عبد الاحد پرہ کو گرفتار کرلیا۔گذشتہ چار روز کے دوران یہ مسلم لیگ کے چوتھے عہدیدارکی گرفتاری ہے ۔ عبدل احد پرہ ایک سومو گاڑی میں سفر کررہے تھے جس کے دوران پولیس کی ایک ناکہ پارٹی نے تلاشی کے دوران اُنہیں دھر لیا۔مسلم لیگ  ترجمان نے عبد الاحد پرہ کی گرفتاری کی تصدیق کی اوراس کو حکومت کی سیاسی انتقام گیری سے تعبیر کیا۔ ترجمان کے مطابق عبد الاحد پرہ حال ہی میں رہا ہوئے تھے اور ابھی وہ اپنا علاج کرانے میں ہی مصروف تھے کہ اُنہیں ایک بار پھر گرفتار کیا گیا۔یاد رہے کہ پولیس نے حریت کانفرنس (گ) کے خلاف ایک وسیع کریک ڈائون شروع کر رکھا ہے جس کے تحت اب تک درجنوں لیڈروں اور کارکنوں کو پابند سلاسل کیا گیا ہے۔بزرگ علاحدگی پسند لیڈر سید علی گیلانی، محمد اشرف صحرائی، جنرل موسیٰ،محمد یوسف میر،محمد یوسف مجاہد ، محمد اشرف لایااورایاز اکبر پہلے ہی پبلک سیفٹی ایکٹ کے تحت ایام اسیری کاٹ رہے ہیں۔
وکلاء کا احتجاج جاری
بار ایسو سی ایشن کے اہتمام سے صدر کورٹ احاطے میں منگل کو بارکے نائب صدر ایڈو کیٹ اعجاز بیدار کی قیادت میںوکلاء کا احتجاجی دھرنا جاری رہا جس کے دوران وکلاء نے میاں عبد القیوم اور جی این شاہین و سینکڑوں نوجوانوں کی رہائی کے حق میں نعرے بلند کئے۔ کشمیر ہائی کورٹ بار ایسو سی ایشن نے عدالتوں کا بائیکاٹ جاری ر کھنے کا اعلان کرتے ہوئے حکومت کو خبردار کیا کہ وہ ایڈوکیٹ میاں عبد القیوم،جنرل سیکریٹری ایڈو کیٹ جی این شاہین، تمام سیاسی قیادت اور نوجوانوں کو فی الفور رہا کرے۔یاد رہے کہ بار ایسو سی ایشن7جولائی سے احتجاجی ہڑتال پر ہے اور تب سے وکلاء کے احتجاجی مظاہروں کا سلسلہ جاری ہے اور وہ بار صدر اور جنرل سیکریٹری کی رہائی کا مطالبہ کررہے ہیں۔ ادھر عدالت عالیہ نے بار ایسو سی ایشن کے محبوس صدر ایڈوکیٹ میاں عبدالقیوم کو اپنے کیس کی پیروی خود کرنے کی درخواست کو سماعت کیلئے منظور کرتے ہوئے حکومت کو اس پر اپنے عذرات 29جولائی کے روزپیش کرنے کے لئے کہا ہے۔عدالت عالیہ  نے ڈانگری جیل راجوری میں نظر بند بار ایسو سی ایشن کے جنرل سیکریٹری ایڈوکیٹ جی این شاہین کی سرینگر منتقلی کے کیس کے حوالے سے پولیس سے وادی کی سبھی جیلوں میں قیدیوں کی گنجائش اور موجودہ صورتحال کے بارے میں تفصیلی رپورٹ طلب کی ہے ۔

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Google photo

آپ اپنے Google اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Connecting to %s

%d bloggers like this: