زخمی نوجوان چل بسا

فورسز گاڑی نے سابق پولیس اہلکار کو کچل ڈالا
وادی میںگذشتہ دو ماہ سے جاری ‘جموں کشمیر چھوڑ دو ‘ مہم کے دوران ہوئی ہلاکتوں میں جمعہ کو اس وقت ایک اور نوجوان کا اضافہ ہواجب   مٹن اسلام آباد کانوجوان پانچ روز تک موت وحیات کی کشمکش میں مبتلا رہنے کے بعد منگل کی صبح اسپتال میں دم توڑ بیٹھا۔مذکورہ نوجوان کو جنوبی کشمیر کے مٹن قصبہ میں فورسز نے 13اگست جمعہ کو شدید عتاب کا نشانہ بنایا تھا۔ اس طرح وادی کے مختلف علاقوں میں 68دنوں کے دوران فورسز کارروائیوں میں جاں بحق ہونے والے افراد کی تعداد59تک پہنچ گئی۔13اگست جمعہ کو جنوبی قصبہ مٹن میں مظاہرین اور پولیس کے درمیان جھڑپیں ہوئیں۔ مقامی لوگوں کے مطابق اس موقعہ پر سی آر پی ایف اہلکاروں نے34سالہ محمد عباس دھوبی ساکن دھوبی محلہ مٹن کوپکڑ کر لاٹھیوں اور بندوق کی بٹھوں سے اس کا شدید زدو کوب کیا۔محمد عباس کو بے ہوشی کی حالت میں صورہ میڈیکل انسٹی چیوٹ منتقل کیا گیا جہاں وہ 5روز تک موت وحیات کی کشمکش میں رہنے کے بعد بالآخر دم توڑ بیٹھا ۔عباس کے سر اور کمر میں شدید چوٹیں آئی تھیں۔محمد عباس مٹن بازار میں آڈیو کیسٹ فروخت کرتا تھا اور انتہائی غریب گھرانے سے تعلق رکھتا تھا۔اسپتال ذرائع کے مطابق ڈاکٹروں نے محمد عباس کو بچانے کی ہر ممکن کوشش کی لیکن منگل کی صبح6بجے وہ زخموں کی تاب نہ لاکر چل بسا۔اس سلسلے میں پولیس میڈیا سینٹر کی طرف سے جاری کئے گئے ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ13اگست کو 300کے قریب افراد پر مشتمل مشتعل ہجوم نے مٹن اسلام آباد میں سیکورٹی فورسز پر پتھر اور اینٹیں پھینکیں اور فورسز کی طرف سے تعاقب کے دوران افرا تفری کے عالم میں کئی لوگ کچلے گئے اور اس میں محمد عباس بھی زخمی ہوگیا ۔ادھر اسلام آبادسے اطلاع ہے کہ محمد عباس کے جاں بحق ہونے کی خبر پھیلتے ہی مٹن میں کہرام مچ گیا ،ہزاروں لوگ مرحوم نوجوان کے گھر میں جمع ہوئے اور وہاں ہر طرف اسلام اور آزادی کے حق میںنعرے بازی شروع ہوئی تاہم مٹن کے باہری علاقوں میں سیکورٹی فورسز کی تعیناتی عمل میں لاکر کرفیو نافذ کیا گیا۔اس دوران بمنہ بائی پاس پر جھڑپوں کے دوران پولیس کا ایک ریٹائرڈ اسسٹنٹ سب انسپکٹر ایک تیز رفتار فورسز گاڑی کی زد میں آکر جاں بحق ہوگیا۔عینی شاہدین نے بتایا کہ بعد دوپہر تین بجے جب نند ریش کالونی کے نزدیک بائی پاس پر مظاہرین اور پولیس کے درمیان جھڑپیں جاری تھیں توسی آر پی ایف کی گاڑیوں نے انتہائی تیز رفتاری کے ساتھ شاہراہ سے گذرنے کی کوشش کی جس کے دوران پولیس کا ریٹائرڈاسسٹنٹ سب انسپکٹر قریب65سالہ محمد یوسف خان ساکن شیخ دائود کالونی بٹہ مالو گاڑی کی زد میں آکر بری طرح سے زخمی ہوا۔اسے فوری طور پر جے وی سی اسپتال منتقل کیا گیا جہاں وہ زخموں کی تاب نہ لاکر دم توڑ بیٹھا۔ دریں اثناء حریت کی طرف سے ہڑتال میں ڈھیل کے باوجود ٹینگہ پورہ بٹہ مالو،جے وی سی ،حبہ کدل،کاکہ سرائے،حبک، حضرت بل ،پلہالن پٹن،بانڈی پورہ ،اسلام آباد، مٹن اور پلوامہ میں مظاہرین اور پولیس کے درمیان جھڑپوں کے فورسزکی ٹیر گیس شیلنگ اور فائرنگ سے درجنوں افراد زخمی ہوگئے جبکہ پولیس اور فورسز کے متعدد اہلکاروں کو بھی چوٹیں آئیں۔ادھراسلام آباد ، مٹن، پلوامہ،ترہگام اور ترال قصبے کو سخت ترین کرفیو کی زد میں لایا گیا ہے جبکہ سرینگر کے بعض علاقوں، کرفیو زدہ قصبوں اور بانڈی پورہ کو چھوڑ کر وادی میں کاروباری سرگرمیاں معمول کے مطابق جاری رہیں۔

Advertisements

2 Responses to زخمی نوجوان چل بسا

  1. ABDULLAH نے کہا:

    انا للہ وانا الیہ راجعون ،
    بس بھائی اللہ سے خیر کی دعا مانگیئے!
    ظالم ہر جگہ موجود ہیں، آج یہاں پنجاب میں بھی دو طالب علم بھائیوں کو پولس کی موجودگی میں لوگوں نے لاٹھیاں مار مار کر جان سے مارڈالا ، ان لڑکوں کے گھر والوں کا کہنا ہے کہ وہ کر کٹ کھیلنے گئے تھے !

  2. ABDULLAH نے کہا:

    کراچی میں الگ ہر کچھ عرصے کے بعد قتل و غارت گری شروع ہوجاتی ہے،
    اللہ سب کو اپنی حفظ و امان میں رکھے،آمین ثمہ آمین

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Connecting to %s

%d bloggers like this: