کشمیر:ایک اور زخمی نوجوان اسپتال میں دم توڑ بیٹھا

11جون سے فورسز کارروائیوں میں ہلاکتوں کی تعداد63
وادی میں ‘جموں کشمیر چھوڑ دو’ تحریک کے دوران زخمی ہونے والے نوجوانوں کا سرینگر کے مختلف اسپتالوں میں دم توڑنے کا سلسلہ جاری ہے۔ پیر کوایک اور 22سالہ نوجوان مسلسل دس روز تک موت و حیات کی کشمکش میں مبتلا رہنے کے بعد صورہ میڈیکل انسٹچوٹ میں زندگی کی جنگ ہار گیا ۔ اس طرح 11جون سے وادی میں فورسز کارروائیوں کے دوران جاں بحق ہونے والوں کی تعداد63ہوگئی ہے۔ہلال احمد شیخ نامی نوجوان 14اگست کو فورسز کارروائی میں زخمی ہوا تھا۔
شمالی کشمیر میں13اگست فورسز کی فائرنگ سے 65سالہ موذن کے جاں بحق ہونے کے بعد 14اگست علی الصبح نماز فجر کے فوراً بعد نوجوانوں کی ایک بڑی تعداد سنگھ پورہ نامی علاقے کے نزدیک سرینگر مظفر آباد شاہراہ پر نکل آئی اور احتجاجی مظاہرے شروع کئے۔اس موقعہ پر نوجوانوں نے مشتعل ہوکر شاہراہ سے گذر رہی سی آر پی ایف کی سات گاڑیوں پر مشتمل ایک کانوائے پر شدید پتھرائو کیا جس کے جواب میں فورسز نے ہوائی فائرنگ کی۔مقامی لوگوں کے مطابق سی آر پی ایف کی طرف سے مظاہرین پر راست گولی چلائی گئی جس کے نتیجے میں22سالہ بلال احمد شیخ ساکن کرپال گڈھ سر میں گولی لگنے سے شدید زخمی ہوا اور اسے فوری طور پر پہلے صدر اسپتال اور بعد میں صورہ میڈیکل انسٹی چیوٹ منتقل کیا گیا۔مذکورہ نوجوان مسلسل دس روز تک صورہ اسپتال میں زیر علاج رہا اور اس دوران اس کا آپریشن بھی کیا گیا تاہم 22اور23اگست کی درمیانی رات ہلال زخموں کی تاب نہ لاکر چل بسا۔بلال احمد کی موت واقع ہونے کی خبر پھیلتے ہی پٹن اور سنگھ پورہ علاقوں میں غم و غصے کی لہر دوڑ گئی اور لوگوں کی ایک بڑی تعداد نے سرینگر مظفر آباد شاہراہ پر سنگھ پورہ کے نزدیک دھرنا دیکر زبردست احتجاج کیا ۔مظاہرین بلال احمدکی ہلاکت کے سلسلے میں فورسز کے خلاف ایف آئی آر درج کرنے تک لاش کو دفن نہ کرنے پر بضد تھے تاہم بعد میں پولیس نے انہیں یقین دلایا کہ اس سلسلے میں ایف آئی آر زیر نمبر193/2010زیر دفعات 147,148,307,336اور341آر پی سی کے تحت درج کر لیا گیا ہے ۔اس یقین دہانی کے بعد میت دوبارہ کر پال گڈھ پہنچائی گئی جہاں ہزاروں لوگوں نے اس کی نماز جنازہ میں شرکت کی اور اسے اسلام و آزادی کے حق میں فلک شگاف نعروں کے بیچ مقامی قبرستان میں سپرد خا ک کیاگیا ۔بلال احمدکی موت کے ساتھ ہی وادی میں 11جون سے فورسز کارروائیوں کے دوران جاں بحق ہونے والے افراد کی تعداد63ہو گئی ہے جن میں 3بچے اور2خواتین شامل ہیں ۔
اس دوران حریت کانفرنس(گ) کی طرف سے احتجاجی دھرنا کی کال کے پیش نظر پائین شہر سمیت کئی قصبوں میں سخت پابندیوں کے باوجود کئی علاقوں میں مظاہرین اور پولیس کے درمیان جھڑپوں میں دو خواتین سمیت درجنوںافراد زخمی ہوئے جن میں پولیس کے ایک ایس پی ، ایک ایس ایچ او اور سی آر پی ایف کے تین افسران سمیت 40اہلکار بھی شامل ہیں۔ادھر کئی مقامات پر گرفتاریوں اور فورسز زیادتیوںکے خلاف مظاہرے کئے گئے اور لوگوں نے نماز سڑکوں پر ادا کرکے دھرنا دیکر احتجاج کیا۔

Advertisements

2 Responses to کشمیر:ایک اور زخمی نوجوان اسپتال میں دم توڑ بیٹھا

  1. کاشف نصیر نے کہا:

    When every one has forget Kashmir, You are still talking about Valley. I really appreciate you

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

w

Connecting to %s

%d bloggers like this: