کشمیر۔۔۔23دسمبر پر نظریں مرکوز

وادی میں اسمبلی انتخابات کے چار مرحلے اختتام کو پہنچنے کے بعد اب نہ صرف حکمران جماعت نیشنل کانفرنس بلکہ اسکی اتحادی کانگریس پارٹی اور اپوزیشن پی ڈی پی سمیت پیپلز کانفرنس اور دیگر چھوٹی چھوٹی جماعتوں کی نظریں 23دسمبر پر مرکوز ہوگئی ہیں۔الیکشن کے مرحلے وادی میں مجموعی طور پر پرامن طریقے سے اختتام پذیر ہوئے اورتمام الیکٹرانک ووٹنگ مشینوں کو 13 ووٹ شماری مراکزتک پہنچا دیا گیا ہے جہاں پولیس کے ساتھ ساتھ نیم فوجی اہلکاروں نے تین دائروں والی سکیورٹی کے تحت ان مراکز کے گردونواح کو مکمل طور سیل کردیا ہے۔اتنا ہی نہیں بلکہ مختلف سیاسی پارٹیوں اور خاص طور پر پی ڈی پی کے ورکر دن رات  ووٹ شماری کے مراکز کے باہر ڈھیرہ جمائے ہوئے ہیں۔ووٹ شماری کیلئے مخصوص تمام مقامات23دسمبر تک دن رات فورسز کی سخت نگرانی میں رہیں گے۔اسی دن پوری ریاست میں ایک ساتھ ووٹ شماری ہوگی اورانتخابی نتائج بھی منظرعام پر آئیں گے ۔اتوار کوانتخابات کے چوتھے مرحلے میں ہی وادی کشمیر کی تمام اسمبلی نشستوں پر ووٹ ڈالنے کا عمل مکمل ہوگیا ۔ان چار مرحلوں میں مجموعی طور وادی کے 46ااور لداخ خطے کے4اسمبلی حلقوں میں پولنگ کا عمل تکمیل کو پہنچ گیا جبکہ پانچویں اورآخری مرحلے کے تحت صرف جموں خطے میں ووٹ ڈالے جارہے ہیں۔ 23دسمبر کو عمل میں لائی جانے والی ووٹوں کی گنتی کے لئے وادی کے تمام ضلع صدر مقامات پر ووٹ شماری کے مراکز قائم کئے گئے ہیں جبکہ کئی مقامات پر ضرورت کے مطابق ضلع صدر مقامات سے باہر بھی ایک سے زیادہ ایسے مراکز کا قیام عمل میں لایا گیا ہے۔ سرینگر ضلع کی تمام8اسمبلی نشستوں کیلئے ڈالے گئے ووٹوں کی گنتی شیر کشمیر انٹرنیشنل کنونشن کمپلیکس(ایس کے آئی سی سی) میں انجام دی جائے گی اور اس سلسلے میں تمام حلقوں سے الیکٹرانک ووٹنگ مشینوں کو ایس کے آئی سی سی منتقل کیا گیا ہے جہاں حفاظت کے غیر معمولی انتظامات کئے گئے ہیں۔ووٹنگ مشینوں کی حفاظت کو یقینی بنانے کیلئے ایس کے آئی سی سی کے گردونواح میں تین دائروں والے حفاظتی بندوبست کے تحت پولیس اور نیم فوجی دستوں نے کمپلیکس کی تمام عمارات کو سیل کردیا ہے اور وہاں صرف خصوصی اجازت نامے رکھنے والے اہلکاروں اور افسران کو ہی جانے کی اجازت دی جارہی ہے۔ضلع الیکشن آفیسر اور ڈپٹی کمشنر سرینگر فاروق احمد شاہ کا کہنا ہے کہ ایس کے آئی سی سی میں سرینگر کے 8 حلقوں کے لئے ڈالے گئے ووٹوں کی گنتی عمل میں لانے کیلئے 8 الگ الگ ہال مخصوص کئے گئے ہیں اورتمام حلقوں کے ووٹوں کی گنتی بیک وقت عمل میں لائی جائے گی۔انہوں نے کہا کہ ووٹ شماری مراکز کے باہر مناسب سکیورٹی کابندوبست کیا گیا ہے تاکہ یہ عمل شفاف اور منصفانہ طریقے پر انجام دیا جائے۔ادھر ووٹ شماری کیلئے سب سے زیادہ یعنی 3مراکز بارہمولہ ضلع میں تین مختلف جگہوں پر قائم کئے گئے ہیں۔بارہمولہ، اوڑی اور سنگرامہ اسمبلی حلقوں کے ووٹ ڈگری کالج بارہمولہ میں گنے جائیں گے جہاں تینوں نشستوں کیلئے الگ الگ ہال مخصوص رکھے گئے ہیں۔سوپور اور رفیع آباد حلقوں کی ووٹ شماری واڈورہ زرعی کالج میں انجام دی جائے گی جبکہ پٹن اور گلمرگ حلقوں کیلئے ڈالے گئے ووٹوں کی گنتی آئی ٹی آئی پٹن میں کی جائے گی۔شمالی کشمیر کے ہی ضلع کپوارہ میں اسمبلی حلقہ ہندوارہ اور لنگیٹ کیلئے ہندوارہ کے آئی ٹی آئی کمپلیکس جبکہ لولاب، کرناہ اور کپوارہ کیلئے آئی ٹی آئی کپوارہ کا انتخاب کیا گیا ہے۔ڈی سی کپوارہ اور ضلع الیکشن آفیسر عطرت حسین رفیقی کے مطابق ووٹ شماری مراکز کے باہر سخت حفاظتی انتظامات کئے گئے ہیں۔ بانڈی پورہ ضلع کی تین نشستوں بانڈی پورہ، گریز اور سونہ وار ی کے ووٹوں کی گنتی ڈی سی آفس بانڈی پورہ میں عمل میں لائی جائے گی۔بڈگام ضلع کی 5اسمبلی نشستوں کیلئے ووٹ شماری مراکز بائز ہائر اسکینڈری سکول میں قائم کئے گئے ہیں اور یہاں بھی سیکورٹی کا سخت پہرہ بٹھا دیا گیا ہے۔گاندربل کی دو نشستوں گاندربل اور کنگن کے لئے ڈالے گئے ووٹ فیزیکل کالج میں گنے جائیں گے جہاں پولیس اور نیم فوجی اہلکاروں کی بڑی تعداد الیکٹرانک ووٹنگ مشینوں کی نگرانی پر مامور ہے۔پلوامہ کی تمام 4اسمبلی سیٹوں کیلئے ووٹوں کی گنتی ڈگری کالج پلوامہ میں انجام دی جائے گی جبکہ کولگام کی 4نشستوں پر ڈالے گئے ووٹ ڈگری کالج کولگام میں گنے جائیں گے۔ ضلع اننت ناگ کے تمام حلقوں کیلئے ووٹوں کی گنتی ڈگری کالج اننت ناگ میں انجام دی جائے گی۔اسی طرح شوپیان کی دو نشستوں کے لئے ڈسٹرکٹ انسٹی چیوٹ آف ایجوکیشن اینڈ ٹریننگ(DIET)کی عمارت میں ووٹوں کی گنتی کے مراکز قائم کئے گئے ہیں۔ان تمام مقامات کی حفاظت پر مامور اہلکاروں کو چوبیس گھنٹے کڑی نگرانی کی ہدایت دی گئی ہے اور ووٹ شماری مراکز کے آس پاس کے علاقوں میں دفعہ144نافذ کیا گیا ہے ۔

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Connecting to %s

%d bloggers like this: