وزارتِ اعلیٰ امیدوار کا پیشگی اعلان لازمی قرار دیا جائے: عمر

twitterانتخابات سے قبل وزارت اعلیٰ یا وزارت عظمیٰ امیدواروں کی نامزدگیاں لازمی قرار دینے کی تجویزدیتے ہوئے نیشنل کانفرنس کے کارگزار صدر اور سابق وزیراعلیٰ عمر عبداللہ نے کہا ہے کہ اِس طرح ووٹ ڈالنے کے بعد پارٹی قیادت کے فیصلے اُن کیلئے حیران کن ثابت نہیں ہونگے۔سماجی رابطہ کی ویب سائٹ ٹویٹر پر عمر عبداللہ نے ایک ٹویٹ کیا ہے ’’میرا ماننا ہے کہ وزیراعلیٰ یا وزیراعظم کے عہدے کیلئے اُمیدواروں کا اعلان انتخابات سے پہلے لازمی قراردیا جاناچاہئے اورامیدواروں کے مابین ایک یا دو مباحثے ہونے چاہئیں‘‘۔اس ضمن میں انہوں نے پیپلز ڈیموکریٹک پارٹی کو ہدف تنقید بناتے ہوئے ایک ٹویٹ کیا ہے کہ’’مجھے معلوم ہے کہ پی ڈی پی قیادت نے انتخابات سے قبل اس طرح کے ایک مباحثے میں شرکت کرنے سے معذوری ظاہر کی تھی ،جس کیلئے صحافی راج دیپ نے کوشش کی تھی‘‘۔انہوں نے کہا کہ رائے دہندگان کو یہ موقعہ دیا جانا چاہئے کہ وہ کس امیدوار کے حق میں ووٹ ڈال سکتے ہیں۔ عمرکا کہنا ہے کہ نامزدگی پہلے ہوجائے اور امیدواروں کے درمیان ایک دو مباحثے ہوجائیں تو عوام کو اس بات کا فیصلہ کرنے میں آسانی ہوگی کہ وہ کس کے حق میں اپنی رائے دے سکتے ہیں۔دلی انتخابات کے پس منظر میں عمر عبداللہ نے ٹویٹ کیا ہے کہ’’مجھے اُمیدہے کہ کرن بیدی اور کجریوال کم سے کم ایک بحث کرنے کیلئے متفق ہوجائیں گے‘‘۔واضح رہے کہ بھارتیہ جنتا پارٹی نے دہلی میں ہونے والے اسمبلی انتخابات سے قبل کرن بیدی کو اپنی پارٹی کی جانب سے وزیر اعلیٰ کے عہدے کیلئے امیدوار نامزد کیا ہے۔بھارت کی پہلی خاتون آئی پی ایس افسر کرن بیدی چند روز قبل ہی بھارتیہ جنتا پارٹی میں شامل ہوئی ہیں۔یہ بات قابل ذکر ہے کہ دہلی کی سابق حکومت کے وزیر اعلیٰ اور عام آدمی پارٹی کے سربراہ اروند کجریوال نے بی جے پی کی جانب سے وزیر اعلیٰ کے عہدے کا امیدوار بنائے جانے پر کرن بیدی کو مبارک باد دی ہے اور ساتھ ہی اُنہیں عوامی مباحثے کا چیلنج بھی دیا ہے۔اس سلسلے میں کجریوال نے ٹویٹ کیا ہے کہ ’میں کسی منصفانہ شخصیت کی نگرانی میں عوامی مباحثے کے لیے آپ کو مدعو کرتا ہوں اور اسے ہر جگہ نشر کیا جانا چاہئے‘۔لیکن کرن بیدی نے واضح کیا ہے کہ وہ اسمبلی میں بحث کے لیے تیار ہیں ،ایوان کے باہر نہیں۔

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Connecting to %s

%d bloggers like this: