پی ڈی پی اور بھاجپا میں نشستوں کا بٹوارہ

پیپلز ڈیموکریٹک پارٹی نے راجیہ سبھا انتخابات کی دو نشستوں پر ہی چناؤ لڑنے کا فیصلہ کرتے ہوئے 2 امیدواروں کو نامزد کیا ہے۔پارٹی ترجمان اعلیٰ کے مطابق فیاض احمد میر اور نذیر احمد لاوے سات فروری کو منعقد ہورہے راجیہ سبھا انتخابات کیلئے پی ڈی پی کے امیدوارہونگے۔واضح رہے کہ پی ڈی پی کی طرف سے حالیہ اسمبلی انتخابات میں جو بھی امیدوار کھڑا کئے گئے تھے، اُن میں فیاض میر اور نذیر لاوے واحد ایسے امیدوارتھے جنہوں نے سب سے کم ووٹوں کی فرق سے ہار کا سامنا کیا تھا۔ اس دوران نیشنل کانفرنس اور کانگریس ’دیکھو اور انتظار کرو‘ کی پالیسی اختیار کئے ہوئے ہیں جبکہ بھاجپا کی طرف سے امیدواروں کی نامزدگی عنقریب متوقع ہے۔واضح رہے کہ اس وقت راجیہ سبھا میں نیشنل کانفرنس اور کانگریس کے دو دو ممبران ہیں جن کی 6سالہ معیاد آئندہ ماہ ختم ہو رہی ہے۔ ان میں غلام نبی آزاد ، ریاستی کانگرس صدر پروفیسر سیف الدین سوز اور نیشنل کانفرنس کے محمد شفیع اوڑی اور غلام نبی رتن پوری شامل ہیں۔ریاست میں معطل اسمبلی اور حکومت سازی پہ تعطل کے بیچ ہی اگرچہ بھارتیہ الیکشن کمیشن نے ریاست جموں کشمیر میں راجیہ سبھا کی 4نشستوں پر انتخابات عمل میں لانے کے اعلان نے سیاسی جماعتوں کو مخمصے میں مبتلا کردیا تھا تاہم معلوم ہوا ہے کہ بھارتیہ جنتا پارٹی اور پیپلز ڈیموکریٹک پارٹی نے چاروں نشستوں پرجیت درج کرنے کیلئے ایک فارمولے پر اتفاق کرلیا ہے جس کے تحت بی جے پی جموں سے دو اورپی ڈی پی کو کشمیر سے دو امیدواروں کو نامزد کرنا ہے۔اگرچہ دونوں سیاسی جماعتوں میں سے ابھی تک کسی نے اس فارمولہ کی باضابطہ تصدیق نہیں کی ہے تاہم پی ڈی پی نے جمعہ کو دو امیدواروں کی نامزدگی کا فیصلہ کرکے اس فیصلے پر مہر ثبت کی۔جموں میں پارٹی ترجمان اعلیٰ نعیم اختر نے جمعہ کو اعلان کیا کہ نذیر احمد لاوے اورفیاض احمد میر راجیہ سبھا انتخابات لڑنے کیلئے پارٹی کے امیدوار ہونگے۔اختر نے کہا کہ یہ فیصلہ پارٹی سرپرست مفتی محمد سعید اور صدر محبوبہ مفتی نے سینئر لیڈران کے ساتھ بحث و تمحیص کے بعد لیا۔انہوں نے کہا کہ دونوں لیڈران نوجوان اور انتہائی سرگرم ہیں اور انہوں نے پارٹی ایجنڈا کو تقویت پہنچانے کیلئے سخت جدوجہد کی ہے۔ فیاض احمد میرشمالی کشمیر کے کپوارہ حلقہ انتخاب سے پہلی بار انتخابی سیاست میں شریک ہوئے اور انہیں 151کے انتہائی کم ووٹوں سے شکست ہوئی تھی۔ پارلیمانی الیکشن میں فیاض کی کاوشوں سے پی ڈی پی کو پہلی بارکپوارہ سے سبقت حاصل ہوئی تھی۔نذیر احمد لاوے جنوبی کشمیر کے حلقہ انتخاب کولگام سے دوسری مرتبہ اسمبلی الیکشن میں شریک ہوئے۔انہوں نے 2008میں بھی چناؤ لڑا تھا تاہم دونوں مرتبہ انہیں 323اور334 ووٹوں سے ہار کا سامنا کرنا پڑا۔ اس دوران پی ڈی پی ذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ راجیہ سبھا انتخابات کے سلسلے میں جمعرات کی شام جموں میں پارٹی سرپرست مفتی محمد سعید کی رہائش گاہ پر سینئر پارٹی لیڈران کا ایک ہنگامی اجلاس منعقد ہوا۔اجلاس میں پارٹی صدر محبوبہ مفتی، ارکان پارلیمان مظفر حسین بیگ و طارق حمید قرہ، نو منتخب ممبران اسمبلی ڈاکٹر حسیب درابو اور سید الطاف بخاری کے علاوہ پارٹی ترجمان اعلیٰ نعیم اختر نے بھی شرکت کی۔ذرائع کے مطابق میٹنگ رات8بجے سے قریب ساڑھے10بجے تک جاری رہی اور اس دوران راجیہ سبھا الیکشن میں بھاجپا کے ساتھ نشستوں کی تقسیم کے معاملے پر تبادلہ خیال کیا گیااور حکومت سازی کا معاملہ بھی زیر بحث آیا۔ اس میٹنگ کے تناظر میں جمعہ کو پی ڈی پی کی طرف سے راجیہ سبھا الیکشن کیلئے کشمیروادی سے دو امیدواروں کی نامزدگی کاباضابطہ اعلان کیا گیا۔اس طرح پی ڈی پی راجیہ سبھا الیکشن کیلئے امیدوار نامزد کرنے والی پہلی جماعت بن گئی ہے۔ بھاجپا ذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ پارٹی نے راجیہ سبھا انتخابات کیلئے5 امیدواروں کے نام مرکزی قیادت کوبھیج دئے ہیں جن میں اشوک کھجوریہ، شمشیر سنگھ منہاس، چندر موہن شرما، وبود گپتا اور کلدیپ راج گپتا شامل ہیں۔نیشنل کانفرنس اور کانگریس تاہم اس معاملے پر دیکھو اور انتظار کرو کی پالیسی پر عمل پیرا ہیں۔

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Connecting to %s

%d bloggers like this: