جموں و کشمیر:مخلوط حکومت کی تشکیل کا اعلان

Mehboba-mufti-Amit-Shahریاست جموں کشمیر میں اسمبلی انتخابات کے دو ماہ بعدپیپلز ڈیموکریٹک پارٹی اور بھارتیہ جنتا پارٹی میں حکومت تشکیل پانے کا معاہدہ طے پایا گیا ہے اور دونوں جماعتوں کے سربراہوں نے مخلوط سرکار قائم کرنے کا باضابطہ اعلان کردیا ۔ حکومت سازی کے سلسلے میں منگل کو پی ڈی پی صدر محبوبہ مفتی نے نئی دلی میں بی جے پی صدر امیت شاہ سے ملاقات کی۔ملاقات کے بعددونوں پارٹی سربراہوں نے جموں کشمیر میں مخلوط حکومت تشکیل دینے کی تصدیق کرتے ہوئے اعلان کیا کہ اگلے چند روز میں نئی حکومت معرض وجود میں آئے گی ۔دونوں جماعتوں نے متنازعہ مسائل جیسے دفعہ 370اور فوج کو حاصل خصوصی اختیارات(افسپا) کو فی الحال بستہ خاموشی میں رکھنے پر رضامندی ظاہر کرلی ہے۔اس دوران معلوم ہوا ہے کہ پی ڈی پی سرپرست مفتی محمد سعید اور وزیراعظم نریند مودی کے درمیان ایک اہم میٹنگ فروری کی27تاریخ کو صبح 9بجے منعقد ہوگی۔ معتبر ذرائع کا کہنا ہے کہ دونوں لیڈران کی میٹنگ کے دوران پی ڈی پی اور بی جے پی اتحاد کو منظوری دی جائے گی ۔ یہ میٹنگ پہلے25فروی شام 6بجے منعقد ہونے جارہی تھی۔ پی ڈی پی اور بی جے پی سربراہوں کی میٹنگ کے فوراً بعدہی مفتی مودی میٹنگ کیلئے تاریخ کا تعین بھی طے پایا گیا۔ امکان ہے کہ مفتی سعید یکم مارچ کو جموں وکشمیر کے وزیر اعلیٰ کی حیثیت سے حلف لیں گے اورڈاکٹر نرمل سنگھ نائب وزیر اعلیٰ جبکہ دونوں پارٹیوں کے چھ چھ لیڈران وزراء کی حیثیت سے حلف لیں گے۔پیپلز ڈیموکریٹک پارٹی اور بھارتیہ جنتا پارٹی کے درمیان بات چیت کے کئی راؤنڈ ہونے کے بعد بالآخر پی ڈی پی صدر محبوبہ مفتی نیمنگل بعد دوپہر بھاجپا صدر امیت شاہ کے ساتھ نئی دہلی میں انکی رہائش گاہ پر45منٹ تک میٹنگ کی جس کے دوران کم از کم مشترکہ پروگرام کوحتمی شکل دی گئی اور باضابطہ اعلان کیا کہ اُن کی جماعت بی جے پی کے ساتھ افہام و تفہیم کے بعد مخلوط حکومت بنانے کے ایک سمجھوتے پرپہنچ گئی ہے۔محبوبہ کے ساتھ میٹنگ میں پارٹی کے سینئر لیڈر اور رکن پارلیمان مظفر حسین بیگ جبکہ امیت شاہ کے ساتھ پارٹی کے قومی جنرل سیکریٹری موجود تھے۔محبوبہ مفتی نے بھاجپا صدر امت شاہ کے ساتھ مشترکہ طور میڈیا کو بتایا ’’ہم حکومت کی تشکیل کے سلسلے میں ایک سمجھوتے پر پہنچ گئے ہیں‘‘۔ محبوبہ مفتی نے تاہم تفصیلات دینے سے یہ کہہ کر معذوری ظاہر کی کہ مفتی مودی ملاقات کے بعد ہی اس پر بات کی جاسکتی ہے ۔ پی ڈی پی صدر نے کہا کہ دونوں جماعتوں نے ایک درمیانی راستہ تلاش کرلیا ہے اور نئی حکومت صرف اقتدار کی شراکت نہیں بلکہ لوگوں کے دل جیتنے کے لئے معرض وجود میں آرہی ہے ۔انہوں نے کہا’’ہم نے میٹنگ میں ریاست کی تعمیر وترقی اورعوام کے جذبات مدنظر رکھتے ہوئے پی ڈی پی اور بی جے پی اتحاد کیلئے ایک ایجنڈا مرتب کرلیا ‘‘۔ اس موقعہ پر امت شاہ نے کہا ’’مجھے خوشی ہے کہ دونوں جماعتوں کے درمیان بات چیت کے کئی راؤنڈ ہونے کے بعد تمام اختلافات تقریباً دورکرلئے گئے ہیں اور آنے والے دنوں میں جموں کشمیر کے اندر پی ڈی پی بی جے پی مخلوط سرکار کا قیام عمل میں لایا جائے گا‘‘ ۔ انہوں نے کہا کہ متنازعہ مسائل کو کم از کم مشترکہ پروگرام میں حل کیا گیا جسے مودی مفتی ملاقات میں حتمی شکل دی جائے گی۔انہوں نے اعتماد کے ساتھ کہا کہ جموں و کشمیر میں عنقریب پی ڈی پی اور بی جے پی پر مشتمل ایک مقبول حکومت دیکھنے کو ملے گی۔اس دوران محبوبہ مفتی کا کہنا ہے ’’متنازعہ مسائل جیسے دفعہ 370اور فوج کو حاصل خصوصی اختیارات(افسپا) کو بات چیت کے کئی ادوار کے بعدحل کیا گیا ہے‘‘۔انہوں نے کہا کہ کم از کم مشترکہ پروگرام پر مشتمل دستاویز کو بہت جلد منظرعام پر لایا جائے گا۔انہوں نے مزید کہا کہ حلف برداری کی تقریب کیلئے کوئی مخصوص تاریخ ابھی طے نہیں ہے لیکن اگلے چند روز میں سب کچھ مکمل ہوجائے گا۔

Advertisements

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

w

Connecting to %s

%d bloggers like this: