اسمبلی2015:گورو قرارداد بحث کیلئے پیش نہ ہوگی

Afzalقانون ساز اسمبلی میں ’افضل گورو کے باقیات کی واپسی‘سے متعلق آزاد رکن اسمبلی انجینئر رشید کی قرارداد پر رواں اجلاس کے دوران بھی اب کوئی بحث نہیں ہوگی۔انجینئر رشید کے مطابق رواں اجلاس کے دوران ایک مرتبہ پھر قانون ساز اسمبلی نے دلی کو خوش کرنے کیلئے جمہوریت اور جمہوری اقدار کا خون کرلیا ۔ واضح رہے کہ انجینئر رشید نے اسمبلی اجلاس سے قبل ایک پریس کانفرنس کے دوران کہا تھا کہ اگر چہ گزشتہ برس عمر عبداللہ کی سربراہی والی این سی کانگریس سرکارکے دوران افضل کے باقیات کی واپسی سے متعلق قرارداد کو ڈراپ کیا گیا تھا تاہم اب کی بار انہیں یقین ہے کہ موجودہ حکومت وہ قصہ نہیں دہرائے گی۔انہوں نے مزید کہا تھا کہ کانگریس کے5ممبران اسمبلی اور پی ڈی پی کے 8ممبران نے تحریری طور پر اس بات کی ضمانت دی ہے کہ مرحوم گورو کے باقیات کی واپسی کے مطالبے پر وہ ان کی حمایت کریں گے۔تاہم منگل کو انجینئر رشید کی اُمیدوں پر اُس وقت اوس پرگئی جب انہیں بتایا گیا کہ افضل سے متعلق آپ کی قرارداد کو بحث کیلئے منظور نہیں کیا گیا۔انہوں نے بتایا کہ منگل کی صبح 9اُنہیں اسمبلی سیکریٹریٹ سے فون آیا کہ آپ 5بجے شام اسمبلی پہنچ جائیں اوربحث کیلئے قراردادوں کو قرعہ اندازی کے ذریعے منظور کیا جائے ۔انہوں نے کہا کہ اسمبلی سیکریٹریٹ نے اُنہیں بتایا کہ ایسا اسلئے کیا جارہا ہے کیونکہ اسمبلی کو زیادہ تعداد میں قراردادیں موصول ہوئی ہیں۔ انہوں نے مزید کہا’’پونے پانچ بجے جب میں اسمبلی سیکریٹریٹ پہنچ گیا تو میں اُس وقت حیران ہوگیا جب اسمبلی سیکریٹری محمد رمضان نے مجھے بتایا کہ قرعہ اندازی دو بجے کی گئی لیکن آپکی قرار دادشامل نہیں ہوسکی‘‘۔ انجینئر رشید نے کہا ’’یہ کھیل نہ صرف میرے ساتھ بلکہ افضل گورو کے خاندان سمیت کشمیری عوام کے ساتھ جان بوجھ کر کھیلا گیا‘‘۔انہوں نے اسمبلی کے اس طریقہ کار کو محض ایک ڈرامہ قرار دیتے ہوئے کہا کہ اس طرح آج ایک مرتبہ پھر جمہوریت کا قتل کیا گیا ۔انہوں نے کہا ’’یہ ڈرامہ صرف دلی میں بیٹھے آقاؤں کو خوش کرنے اور حکومت بچانے کی خاطر رچا یاگیا‘‘۔ انہوں نے کہا کہ ریاستی حکومت نے ایک سوچی سمجھی سازش کے تحت ان کی قرارداد کو سبوتاژ کیا اور قرارداد سبوتاژ کرکے کشمیری عوام کے سامنے ان کی دوہری پالیسی ایک بار پھر عیاں ہوکر رہ گئی ہے کیونکہ وہ ایک طرف افضل کے باقیات لوٹانے کی وکالت کرتے ہیں تو دوسری جانب ان کی جانب سے ہی مقرر کئے گئے سپیکر نے’ قانون‘ کی کتاب کا سہارا لیکر باقیات لوٹانے کی خاطر ان کی جانب سے پیش کی گئی قرارداد ہی مسترد کردی۔

Advertisements

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Connecting to %s

%d bloggers like this: