سوپور میں سابق جنگجو کو گولی ماردی گئی

شمالی قصبہ سوپور میں عام شہریوں کی ہلاکتوں کا سلسلہ جاری ہے جس سے قصبے میں خوف و دہشت کا ماحول قائم ہوگیا ہے۔اتوار کو ایک مرتبہ پھرنامعلوم بندوق برداروں نے قصبہ کے بادام باغ علاقے میں ایک اور شہری کو قتل کردیا۔اس ہلاکت کے بعد قصبے میں25مئی سے نامعلوم بندوق برداروں کے ہاتھوں ہلاکتوں کی تعداد 5ہوگئی ہے۔

واضح رہے کہ حریت (گ)چیئرمین سید علی گیلانی نے حالیہ ہلاکتوں کے خلاف ضلع بارہمولہ میں اتوار کو ہڑتال کی کال دی تھی۔ اتوار کی صبح8بجکر30منٹ پر 37سالہ معراج الدین ڈار ولد محمد احسن اپنے گھر کے باہر اپنی پولٹری دکان کھول ہی رہا تھا کہ نامعلوم بندوق برداروں نے اْن پر پے در پے گولیاں چلائیں اوروہ خون میں لت پت ہوکر گرپڑا۔ڈار کو فوری طور ڈسٹرکٹ ہسپتال سوپور پہنچایا گیا جہاں اْسے مردہ قرار دیا گیا۔اس واقعہ کے بعدبٹہ پورہ ،مسلم پیر،کرانکشون کالونی ،عش پیر اور اسکے گرد ونواح میں نوجوانوں نے سڑکوں پر آکر احتجاج کیا۔احتجاجی مظاہرین کا کہنا تھا کہ قصبے میں جاری ہلاکتوں کے سلسلے میں پولیس نامعلوم بندوق برداروں کا پتہ لگانے میں ناکام ہوئی ہے۔احتجاج میں شدت آنے کے دوران مظاہرین اورپولیس کے مابین جھڑپیں ہوئیں۔معراج االدینکے بارے میں معلوم ہوا ہے کہ وہ جموں کشمیر لبریشن فرنٹ کا سابق جنگجو تھا اور اب پولڑی کا کام کر کے اپنا پیٹ پالتا تھا۔اس کاوالد مقامی اوقاف کمیٹی کا صدر ہے۔ دو بیٹیوں کے والد معراج الدین ڈار کی ہلاکت قصبے میں گذشتہ تین ہفتوں سے کم عرصے کے دوران پانچویں ہلاکت ہے۔اس ہلاکت کے بعد قصبے میں خوف و دہشت کا ماحول ہے۔ اس دوران پولیس اور فورسز نے قصبے میں تلاشی کارروائیوں کا سلسلہ تیز کردیا ہے۔ادھرڈی آئی جی شمالی کشمیر غریب داس نے کہا ہے کہ ان پراسرار ہلاکتوں کے حوالے سے کچھ گرفتاریاں عمل میں لائی گئی ہیں اور تحقیقاتی عمل جاری ہے۔انہوں نے کہا کہ چونکہ ہلاکت خیز واقعات کی تحقیقات ابتدائی مراحل میں ہے، اس لئے ابھی کچھ کہنا قبل از وقت ہوگا۔واضح رہے کہ سوپورقصبے میں موبائل سروس بند کرانے کے حوالے سے گذشتہ ماہ لشکر اسلامی نامی ایک غیر معروف عسکری تنظیم نے موبائل سروس بند کرنے کیلئے دھمکی آمیز پوسٹر چسپاں کئے تھے۔موبائل کاروبار سے منسلک افراد کو اپنا کاروبار بند کرنے کیلئے بھی کہا گیا تھا۔ دھمکی آمیز پوسٹروں کے بعدقصبے میں واقع بی ایس این ایل کے ایک نجی شوروم پر25مئی کو نامعلوم افراد نے فائرنگ کی جس میں ایک شخص لقمہ اجل اور دو دیگر شدید زخمی ہوئے تھے۔اس واقعہ کے دو دن بعد قصبے کے ڈورو علاقے میں موبائل ٹا?ر کیلئے زمین کرایہ پر دینے والے ایک شخص کو گولی مار کر ابدی نیند دسلا دیا گیاجبکہ پٹن میں بھی اس طرح کا ایک واقعہ رونما ہوا تاہم اس میں کوئی جانی نقصان نہیں ہو ا۔9جون کو نامعلوم بندوق براداروں نے پیشے سے فارماسسٹ اور تحریک حریت رکن الطاف احمد شیخ کو گولیوں کا نشانہ بناکر جاں بحق کیا۔ اس واقعہ کے تین دن بعد 12جون کو سوپور کے مضافاتی علاقہ بمئی میں مقامی ٹریڈرس فیڈریشن کے جوان سال صدر کو نا معلوم اسلحہ برداروں نے گولیاں مار کر جاں بحق کردیا۔اس دوران معلوم ہوا ہے کہ حریت (گ)چیئرمین سید علی گیلانی کی کال پر اتوار کوقصبے میں کاروباری ادارے بند رہے اورٹریفک نظام بھی مفلوج ہوکر رہ گیا تھا۔

 

Advertisements

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

w

Connecting to %s

%d bloggers like this: