مفتی محمد سعیدکا انتقال ، سرکاری اعزاز کے ساتھ سپرد خاک

Mufti Sayeedریاست جموں و کشمیر کے12ویں وزیراعلیٰ اور پیپلز ڈیموکریٹک پارٹی کے سرپرست 79سالہ مفتی محمد سعید جمعرات کی صبح نئی دلی میں انتقال کرگئے۔اُنہیں پھیپھڑوں میں انفیکشن ہونے کی وجہ سے 24دسمبر2015کو ہنگامی بنیادوں پر علاج و معالجہ کیلئے آل انڈیا انسٹی چیوٹ آف میڈکل سائنسز (ایمز) میں داخل کیا گیا تھا،جہاں وہ جمعرات کی صبح 7:30 بجے چل بسے۔اتفاق کی بات یہ ہے کہ 24دسمبر جمعرات کو ہی وہ علیل ہونے کے بعد نئی دلی منتقل کئے گئے اور جمعرات کو ہی انکی روح پرواز کر گئی۔مرحوم کوبلند فشار خون(ہائی بلڈ پریشر) ،گردوں اور جگر کے امراض کا بھی سامنا تھا۔ انہیں14دن تک ایمز کے انتہائی نگہداشت والے یونٹ( آئی سی یو) میں رکھا گیا تاہم بدھ کو اُن کی طبیعت زیادہ خراب ہونے کے بعد انہیں لائف سپورٹ سسٹم پر رکھا گیا ۔مفتی سعید کی تین بیٹیاں محبوبہ مفتی، ڈاکٹر روبیہ سعید، محمودہ سعید عرف بے بی اور ایک بیٹا تصدق مفتی عرف نکسن ہیں۔ان میں سے صرف محبوبہ مفتی سیاست میں ہیں ۔محبوبہ فی الوقت رکن پارلیمان ہیں اور گذشتہ 20سال سے کشمیر کی مقامی سیاست میں سرگرم ہیں۔مفتی محمد سعید کے جسد خاکی کو پہلے دلی سے سرینگر اور بعد میں بجبہاڑہ (اننت ناگ) پہنچایا گیا جہاں انہیں سرکاری اعزاز کے ساتھ داراشکوہ(پادشاہی باغ)بجبہاڑ ہ کے ایک کونے میں دفن کیاگیا۔24دسمبر جمعرات کی صبح وزیر اعلیٰ نے گپکار روڑ سرینگر پر واقع اپنی رہائش گاہ پر اچانک بے چینی محسوس کی اور ان پر غشی طاری ہوئی۔ اس کی شکایت کرنے کے فوراً بعد وزیر اعلیٰ کو نئی دلی لیجانے کا فیصلہ کیا گیا۔ مفتی محمد سعید کو سرکاری طیارے میں سرینگر سے براہ راست دلی منتقل کیا گیا جہاں آل انڈیا انسٹی چیوٹ آف میڈیکل سائنسز میں ان کا طبی معائنہ کرکے انہیں اسپتال میں ہی داخل کردیا گیا۔دلی منتقل کرنے سے دوروز قبل مفتی محمد سعید نے سخت سردی کے بیچ شہر سرینگر کا تفصیلی دورہ کیا تھا جو قریب چھ گھنٹوں تک جاری رہا۔دورے کے بعد مفتی محمد سعید نے تھکان اور کمزوری کی شکایت کی اور ایک دن اپنی سرکاری رہائش گاہ پر مکمل آرام کیالیکن اگلے ہی روز انہیں ہنگامی بنیادوں پر ایمز منتقل کیا گیا جہاں وہ مسلسل 14روز تک ڈاکٹروں کی ایک خصوصی ٹیم کی نگرانی میں رہے۔ڈاکٹروں کے مطابق بدھ کو ان کی طبیعت زیادہ بگڑنے کے بعد انہیں انتہائی نگہداشت کے یونٹ میں رکھا گیا تھا جہاں وہ جمعرات کی صبح 7بجکر30منٹ پر چل بسے۔ ان کی جسد خاکی کو قریب 11بجے ایمز سے پالم ہوائی اڈے لے جایا گیا،جہاں وزیر اعظم نریندر مودی نے اُن کی میت پر پھولوں کے ہار چڑھاکر خراج عقیدت پیش کیاجبکہ وزیر داخلہ راج ناتھ سنگھ وہاں پہلے سے موجود تھے ۔اس موقع پر قومی سلامتی کے مشیر اجیت دوؤل سمیت مرکزی حکومت کے کئی عہدیدار بھی ہوائی اڈے پر موجود تھے ۔مفتی محمد سعید کے جسد خاکی کو بعد دوپہر قریب دو بجے نئی دلی سے ائر فورس کے ایک خصوصی طیارے کے ذریعے براہ راست سرینگر پہنچایا گیا۔سرینگر کے ہوائی اڈے سے ان کی میت ایک ایمبولنس کے ذریعے گپکار روڑ پر ان کی سرکاری رہائش گاہ’فیئر ویو‘ لائی گئی جہاں پی ڈی پی سمیت مختلف سیاسی جماعتوں کے سیاسی لیڈران کے ساتھ ساتھ سینکڑوں پی ڈی پی کارکنان موجود تھے۔دلی سے مفتی محمد سعید کی میت کے ساتھ ان کی بیٹی اور پی ڈی پی صدرمحبوبہ مفتی کے علاوہ مرکزی وزیر داخلہ راجناتھ سنگھ اور وزیر اعظم کے آفس میں وزیر مملکت ڈاکٹر جتندر سنگھ، سابق وزرائے اعلیٰ عمر عبداللہ اور غلام نبی آزاد بھی سرینگر پہنچے۔اس موقعہ پر پی ڈی پی اور مرحوم وزیر اعلیٰ کے حق میں زوردار نعرے بازی کے بیچ پی ڈی پی کارکنوں کو پھوٹ پھوٹ کر روتے ہوئے اپنے لیڈر کو یاد کرتے ہوئے دیکھا گیا۔ بعد میں ان کی میت ایک جلوس کی صورت میں سرینگر کے شیر کشمیر اسٹیڈیم پہنچائی گئی جہاں ان کی نماز جنازہ ادا کی گئی۔اس موقعہ پر گپکارروڑاور اسٹیڈیم کے آس پاس حفاظت کے انتہائی سخت انتظامات کئے گئے تھے اور اہم شخصیات کی موجودگی کے باعث ہر طرف سیکورٹی اہلکاروں کا جال بچھا یا گیا تھا۔نماز جنازہ میں متعدد سیاسی لیڈران اور پی ڈی پی کارکنوں کی بھاری تعداد نے شرکت کی۔اس سے قبل پولیس کے ایک خصوصی دستے نے مرحو م وزیر اعلیٰ کو گارڈ آف آنر بھی پیش کیا۔ سرینگر میں نماز جنازہ ادا کرنے کے بعد مفتی محمد سعیدکا جسد خاکی گاڑیوں کے ایک قافلے کی صورت میں ان کے آبائی قصبہ بجبہاڑہ منتقل کیا گیا۔بجبہاڑہ میں لوگوں کی بھاری تعداد میت کا انتظار کررہی تھی ۔یہاں داراشکوہ(پادشاہی باغ)میں ان کی ایک مرتبہ پھر نماز جنازہ ادا کی گئی اورشام دیر گئے اسی باغ کے ایک کونے میں سپرد خاک کیاگیا۔

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Connecting to %s

%d bloggers like this: