پیلٹ کا قہر۔۔۔ 3لڑکیوں سمیت 71 افرادکی آنکھیں متاثر

وادی میں حزب کمانڈر برہان وانی کی ہلاکت کے بعد چار روز کے پر تشدد واقعات کے دوران احتجاجی مظاہرین کو روکنے کیلئے فورسزاہلکاروں نے طاقت کا بے تحاشا استعمال کیا جس کے نتیجے میں اندھا دھند طریقے سے ہلاکتیں بھی ہوئیں اور سینکڑوں افراد زخمی ہوئے۔صورتحال کا المناک پہلو یہ ہے کہ تشدد کے واقعات کے دوران درجنوں کی تعداد میں نوجوان بینائی سے محروم ہونے کی دہلیز پر ہیں۔ان نوجوانوں کو قابو میں کرنے کیلئے اْن کے جسم کوہی نشانہ نہیں بنایا گیا بلکہ اْن کے چہرے پر بھی پیلٹ فائر کئے گئے اور وہ اس وقت سرینگر کے صدر ہسپتال اور جہلم ویلی کالج (جے وی سی) میں زیرعلاج ہیں۔ابھی تک ایک کی بینائی متاثر ہوچکی ہے۔ دستیاب اعداد و شمار کے مطابق صدر اسپتال میں فی الوقت 65نوجوان مکمل طور زیر علاج ہیں ،15نوجوانوں کو وقتی طور پر داخل کیا گیا جبکہ12 نوجوانوں کی مرہم پٹی کی گئی۔ صدر ہسپتال میں جو نوجوان لائے گئے اْن میں 15کو گولیاں لگی تھیں جن میں سے 7کو صورہ اور برزلہ منتقل کیا گیا ہے۔3 نوجوان شل لگنے سے زخمی ہوئے ہیں، ایک پتھر لگنے سے اور 3مارپیٹ سے مضروب ہوئے ہیں لیکن زخمیوں کی اس کثیر تعداد میں ایسے نوجوان بھی شامل ہیں جن کے بارے میں ڈاکٹروں کا کہنا ہے کہ اْن کی بینائی جانے کے قوی امکانات ہیں۔ صدر ہسپتال میں ایسے77نوجوانوں کو لایا گیا تھا جن کو پیلٹ لگے تھے لیکن حیران کن طور پر اِن نوجوانوں میں 71ایسے ہیں جن کی آنکھوں پر پیلٹ لگے ہیں۔ان میں 3جواں سال لڑکیاں بھی شامل ہیں۔ شاہینہ ، شمیمہ اور رخسانہ ساکنان بجبہاڑہ سنیچر کی آنکھوں میں پیلٹ لگنے سے زخمی ہوئیں اور تب سے وہ صدر ہسپتال کے امراض چشم وارڈ میں داخل ہیں۔71افراد میں سے قریب دو درجن نوجوانوں کی ایک ایک آنکھ پیلٹ لگنے سے متاثر ہوئی ہے جبکہ باقی ماندہ زیر علاج زیر نوجوانوں کی دونوں آنکھوں پر براہ راست پیلٹ فائر کئے گئے ہیں۔صرف آنکھیں ہی نہیں بلکہ اْن کے چہرے بھی بدنما بن گئے ہیں۔ڈاکٹروں کا کہنا ہے کہ کئی ایک نوجوانوں کی دونوں آنکھوں کی بصارت متاثر ہوسکتی ہے جبکہ درجنوں نوجوانوں کی ایک آنکھ متاثر ہوئے بنا نہیں رہ سکتی۔ان نوجوانوں کے علاج و معالجہ پر کثیر رقم درکار ہوگی لیکن تب بھی وثوق کے ساتھ یہ نہیں کہا جاسکتا کہ اْن کی بینائی واپس آسکتی ہے یا نہیں۔غور طلب بات یہ ہے کہ پیلٹ فائر سے جو نوجوان متاثر ہوئے ہیں اْن میں ایک معصوم بچہ بھی شامل ہے جس کی عمر فقط 13برس ہے۔ عمر نذیر ولد نذیر احمد شاہ ساکن اہربل شوپیان وہ لڑکا بھی متاثرین میں شامل ہے جس کی آنکھوں پر پیلٹ لگے ہیں۔ جے سی سی میں جن نوجوانوں کی آنکھوں میں پیلٹ لگے تھے انکی تعداد 30ہے۔ ان میں 15کے چہروں پر بھی پیلٹ لگے ہیں جنہیں اسپتال سے رخصت کیا گیا ہے اور ابھی بھی15نوجوان زیر علاج ہیں جن میں عاصف احمد ساکن یاری پورہ کولگام کی بینائی ختم ہوچکی ہے۔باقی ماندہ پیلٹ سے متاثرہ افراد کا علاج و معالجہ چل رہا ہے لیکن انکی بینائی بھی متاثر ہوسکتی ہے۔

Advertisements

One Response to پیلٹ کا قہر۔۔۔ 3لڑکیوں سمیت 71 افرادکی آنکھیں متاثر

  1. Iftikhar Ajmal Bhopal نے کہا:

    اے میرے خالق و مالک ۔ تیری بنائی اس دُنیا سے انصاف مِٹ چکا ۔ تیری مخلوق انسان کے دِل پتھر کے ہو چکے ۔ میرے مالک تُو سب کچھ دیکھ رہا ہے ۔ تیرے حُکم سے معمولی پرندے ہاتھیوں کو خس و خاشاک کر سکتے ہیں اور آگ کا الاؤ ٹھنڈا ہو سکتا ہے
    اے رب ذوالجلال و رحمٰن و رحیم ۔ اپنا رحم و کرم کرتے ہوئے غیب سے میرے کشمیری بھائیوں کی مدد فرما اور ظالموں کو نیست و نابُود کر دے
    http://www.theajmals.com

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Connecting to %s

%d bloggers like this: